Aakhiri baar aah kar li hai – Jaun Elia Best Ghazal

آخری بار آہ کر لی ہے

میں نے خود سے نباہ کر لی ہے

اپنے سر اک بلا تو لینی تھی

میں نے وہ زلف اپنے سر لی ہے

Aakhiri baar aah kar li hai,
maine khud se nibaah kar li hai.

Apne sar ek bala toh leni thi,
maine woh zulf apne sar li hai.

دن بھلا کس طرح گزارو گے

وصل کی شب بھی اب گزر لی ہے

جاں نثاروں پہ وار کیا کرنا

میں نے بس ہاتھ میں سپر لی ہے

Din bhala kis tarah guzaaroge,
wasl ki shab bhi ab guzar li hai.

Jaan-nisaron pe vaar kya karna,
maine bas haath mein sipar li hai.

جو بھی مانگو ادھار دوں گا میں

اس گلی میں دکان کر لی ہے

میرا کشکول کب سے خالی تھا

میں نے اس میں شراب بھر لی ہے

Jo bhi mango udhaar dunga main,
us gali mein dukaan kar li hai.

Mera kashkol kab se khaali tha,
maine is mein sharaab bhar li hai.

اور تو کچھ نہیں کیا میں نے

اپنی حالت تباہ کر لی ہے

شیخ آیا تھا محتسب کو لیے

میں نے بھی ان کی وہ خبر لی ہے

Aur toh kuchh nahin kiya maine,
apni haalat tabaah kar li hai.

Shaikh aaya tha mohtasib ke liye,
maine bhi unki woh khabar li hai. !!

Also Read : Aap Apna Ghubar The Hum Toh – Jaun Eliya Ghazal

Spread the love
  • 7
    Shares

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *