Mujhko Aap Apna Aap Dijiyega – Jaun Elia Ghazal

مجھ کو آپ اپنا پتا دیجیے گا
اور کچھ بھی نہ مجھ سے لیجیے گا

Mujhko aap apna pata dijiyega,
aur kuchh bhi na mujh se lijiyega.

آپ بے مثل بے مثال ہوں میں
مجھ سِوا آپ کس پر ریجھیے گا

Aap bemisl, bemisaal hun main,
mujh siwa aap kis pe rijhiyega.

آپ جو ہیں ازل سے ہی بے نام
نام میرا کبھی تو لیجیے گا

Aap jo hain azal se hi benaam,
naam mera kabhi toh lijiyega.

آپ بس مجھ میں ہی تو ہیں، سو آپ
میرا بے حد خیال کیجیے گا

Aap bas mujh mein hi toh hain, so aap
mera behad khyaal kijiyega.

ہے اگر واقعی ہی شراب حرام
آپ ہونٹوں سے میرے پیجیے گا

Hai agar waaqai sharaab haraam,
aap hothon se mere pijiyega.

انتظاری ہوں اپنا میں دن رات
اب مجھے آپ بھیج دیجیے گا

Intezaari hun apna main din raat,
ab mujhe aap bhej dijiyega.

آپ مجھ کو بہت پسند آئیں
آپ میری قمیص سیجیے گا

Aap mujh ko bahut pasand aaye,
aap meri kameez sijiyega.

دل کے رشتے ہیں جون جھوٹ کے رشتے
یہ معمّا کبھی نہ بوجھیے گا

Dil ke rishte hain khoon, jhooth ki sach,
ye muamma kabhi na boojhiyega.

ہے میرے جسم و جان کا ماضی کیا
مجھ سے بس یہ کبھی نہ پوچھیے گا

Hai mere jism-o jaan ka maazi kya ?
mujh se bas ye kabhi na poochiyega.

مجھ سے میری کمائی کا سرِ شام
پائی پائی حساب لیجیے گا

Mujh se meri kamaai ka sar-e shaam,
paai paai hisaab lijiyega.

زندگی کیا ہے اک ہُنر کرنا
سو قرینے سے زہر پیجیے گا

Zindagi kya hai, ik hunar karna
so qareene se zehar pijiyega.

میں جو ہوں جون ایلیا ہوں جناب
اس کا بے حد لحاظ کیجیے گا

Main jo hun, ‘Jaun Eliya’ hun janaab,
iska behad lihaaz kijiyega. !!

Also Read : Aye Wasl Kuchh Yahan Na Hua Kuchh Nahi Hua.. Jaun Elia

Spread the love

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *